جواں سال شاعر

Thursday, August 23, 2018

بچپنا تجھ میں اگر ہے تو شرارت کرلے

🌹   *غزل*   🌹

بچپنا تجھ میں اگر ہے تو شرارت کرلے
ورنہ لازم ہے بزرگوں کی اطاعت کرلے

اپنے کردار کا افسانہ حقیقت کرلے
آ , کہ ہر لہجہء گفتار صداقت کرلے

ساعتیں یوں تو ہوا کرتی ہیں لاکھوں دن میں
ایک ساعت تو مرے واسطے زحمت کرلے

مجھ سے دیکھی نہیں جائنگی تری نم آنکھیں
مسکراتے ہوئے آکر مجھے رخصت کرلے

تیرے اپنوں میں پرائے بھی چھپے ہوتے ہیں
اسکے ادراک کے چلتے کوئی حکمت کرلے

قول اور فعل میں ہم رنگیاں راہی ہوں ترے
کم سے کم اسکی میاں تُو ہی جسارت کرلے

...ڈاکٹر یاسین راہی

No comments:

Post a Comment

Pages